اسلامی جمہوریہ پاکستان

Posted on August 12, 2016



اب بات ھوجاے ذرا مذہب اور مذہبی رہنماؤں کی۔ پاکستان ایک خودساختہ نام نہاد اسلامی ملک ھے۔ دنیا میں سب سے زیادہ پورن( porn ) ویب سائٹس پاکستانی دیکھتے ہیں ۔

پاکستان میں جتنی غیر مذہبی حرکات مذہب کے نام پر کیجاتی ھیں ان کا تصور بھی مشکل ھے۔ مذہب کے نام پر انپڑھ اور جاحل عوام کو خوب استعمال کیا جاتا ھے۔ کبھی ان کو ناموس رسول کے نام پر غیر مسلم اقلیتوں کے قتل اور ان کے گھر اور املاک کی تباہی کیلئے استعمال کیا جاتا ھے ۔ اور کبھی خودساختہ نام نہاد بے ضمیر شیخ الاسلام حکمرانوں کو بلیک میل کر کے پیسے نکلوانے کے لیے استعمال کرتا ھے۔ اور تو اور گورنر کے قتل کے مجرم کو بھی شہید بنا کر پیش کیا جاتا ھے اور جو لوگ اس کی حمایت میں دھرنا دیتے ہیں وہ ایسی گندی گالیاں اور زبان پبلک میں استعمال کرتے ھیں کہ سن کر شرم آتی ھے۔ اور پھر اسی گندے اور بدبودار منہ سے انہیں اللہ اور رسول کا نام لیتے ھوے ذرا بھر شرم نہیں آتی ۔

مذہب کے نام پر لاکھوں کا جلوس نکالا جاتا ھے لیکن نماز کے وقت ان میں سے ایک ھزار بھی موجود نہیں ھوتے۔ یہ عجیب مسلمان ہیں کہ جب نماز اور روزہ کی بات ھو تو کھتے ھیں کہ نماز اور روزہ تو دل کا ھوتا ھے۔ اور شرم اور پردہ آنکھوں کا۔ کوئی ان سے پوچھے کہ کیا یہ بات ھمارے نبی صل اللہ علیہ و آل وسلم کو معلوم نہیں تھی جنہوں نے اپنی ساری عمر عبادات میں گزار دی۔

پاکستانیوں کی بھاری تعداد ضعیف العقیدہ اور شرک کے مرض میں مبتلا ھے۔ جگہ جگہ جعلی پیروں کے مزار ھیں جن پر گندے، غلیظ اور جاھل مجاوروں نے قبضہ کیا ھوا ھے ۔ جاھل اور بدعقیدہ لوگ ان سے رزق اور اولاد مانگ رھے ھوتے ھیں ۔ اور تو اور ملک کا وزیر خزانہ بھی بڑے فخر سے اللہ کی دی ھوئ دولت کے بارے میں یہ کہتا ھے کہ یہ سب داتا صاحب کا کرم ھے۔ انا للہ وانا الیہ ۔۔۔۔۔۔۔

قبروں کو سجدہ کرنے والے، گھوڑوں اوران پڑھ جاھل مجاوروں سے رزق اور اولادیں مانگنے والے پتہ نہیں کس منہ سے ھئندوں کو بت پرست اور گائے کا پجاری کہتے ھیں ۔ ایک فرقے کے لوگ دوسرے فرقوں کو کافر سمجھتے ھیں اور ایک دوسرے کے ساتھ نماز تک مل کر نہیں پڑھ سکتے ۔ اکثر لوگوں کو نماز اور قرآن تو دور کی بات ھے کلمہ بھی صحیح طرح سے پڑھنا نہیں آتا ۔ قرآن کو گھروں میں غلاف میں لپیٹ کر رکھا ھوتا ھے اور وہ صرف جھوٹی قسمیں کھانے کے کام آتا ھے۔

سب سے کم پڑھا لکھا جو کوئی اور کام نہ کر سکے امام مسجد بن جاتا ھے اور لوگوں کو مزید گمراہی اور فرقہ پرستی میں ڈال دیتا ھے تاکہ اس کے حلوے مانڈے چلتے رہیں ۔ جو چند لوگ قرآن مجید پڑھتے ھیں ان کی اکثریت بھی قرآن مجید کو ترجمے کے ساتھ نہیں پڑھتی۔ تو پھر دین کی دعوت کیسے ان کے دل میں اترے گی۔