کمروں میں بیٹھ کر مذمتیں

Posted on August 6, 2016








سنا ہے کشمیر پر کیبنٹ کا ایک اور اجلاس ہو گیا جس میں وہاں ہونے والے ظلم کی ” مذمت ” کی گئی ہے !
یعنی حد ہوگئی ۔۔۔۔۔ کشمیر میں کرفیو کو چوتھا ہفتہ ہوگیا۔ وہاں جانوروں کو شکار کرنے والی گنوں سے کشمیریوں کا شکار کیا جا رہا ہے۔ وہاں غذائی قلت پیدا ہوچکی ہے۔ لیکن یہ ابھی تک ملک کے اندر ہی ایک کمرے میں بیٹھ کر ایک دوسرے کے سامنے مذمت کر لیتے ہیں اور اسکی خبر میڈیا پر چلا دیتے ہیں !!!!!
وزیراعظم پاکستان نے کشمیر پر ابھی تک قوم سے خطاب کیوں نہیں کیا ؟؟ جبکہ پانامہ لیکس پر ہر ہفتے خطاب ہو رہا تھا !!
وزیراعظم پاکستان نے نریندر مودی کو فون کیوں نہیں کیا ؟؟ جبکہ پٹھان کوٹ والے ڈرامے پر فون کرنے میں ایک لمحے کی تاخیر نہیں کی تھی!!
کشمیری مسلمانوں کو کاٹا جا رہا ہے اس ظلم کے خلاف اس نے عالمی برادی سے رجوع کیوں نہیں کیا ؟ امریکہ اور یورپ یہ معاملہ اٹھانے کیوں نہیں گئے ؟؟ جبکہ خود صرف پیٹ میں درد ہونے پر لندن تشریف لے گئے تھے !!
پٹھان کوٹ میں واقعہ ہوا تو اسکی ایف آئی آر پاکستان میں کاٹنے کا حکم دیا۔ کارگل جنگ پر پاک فوج کے خلاف کاروائی کا اعلان کیا ۔۔۔ کاش کشمیریوں پر ہونے والے ظلم کے خلاف بھی ایک علامتی ایف آئی آر کاٹ دیتے !
کیا جمہوریت صرف ڈرامے بازی ہی کا نام ہے ؟؟؟
ان سے تو فیس بک پر بیٹھنے والے بچے اچھے ہیں جنہوں نے کشمیر کے لیے سوشل میڈیا پر مہم چلا کر اپنی آواز عالمی برادری اور انڈیا تک پہنچائی اور بی بی سی سمیت دنیا کی بڑی نیوز ایجنسیوں نے انکی کوششوں پر تبصرے کیے !
تحریر شاہدخان