ایرانی اخبار میں تُرکوں کی توہین.. آذریوں کی مذمت

Posted on July 25, 2016

ایران کے ایک اخبار “طرح نو” نے بدھ کے روز ایک مضمون شائع کیا جس میں شامل بعض عبارتوں کو تُرکوں کے خلاف “نسل پرستی” پر مبنی قرار دیا جارہا ہے۔ اس کے نتیجے میں ایران میں آذری باشندوں میں شدید غم و غصہ پھیل گیا ہے۔ وہ سوشل میڈیا کے ذریعے ایک مہم چلا رہے ہیں جس کے ذریعے ایرانی میڈیا میں ترک قومیت کے خلاف پھر سے نسل پرستی کی لہر اٹھنے کی سخت مذمت کی گئی ہے۔
ایرانی اخبار میں شائع ہونے والے مضمون میں کہا گیا ہے کہ تُرکوں کے خلاف معرکے میں فارسی سپہ سالار رستم نے طورانی فوج کے سپہ سالار کو “ذلیل” قرار دیا۔ مزید برآں رستم نے ترک سپہ سالار کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ” ہم طورانیوں کو مرد تسلیم نہیں کرتے بلکہ وہ عورتوں کی طرح ذلیل ہیں۔ اے تُرک ! تو ایک گندی قوم اور نسل سے ہے لہذا تو مردوں سے لڑنے کے ہم سر نہیں۔ پس جا کر اپنے ہاتھ میں چرخہ پکڑ اور عورتوں کی طرح روئی کاتنے کا کام کر”۔
ایران کے صوبے آذربائیجان میں تُرک کارکنان کے مطابق اس نسل پرستانہ مضمون کے لکھاری نے تین گروہوں کو نشانہ بنایا ہے۔ اُس نے ایک ہی وقت میں ترک قوم ، خواتین اور روئی کاتنے والوں کی توہین کی ہے۔
ایرانی آذربائیجان کے علاقوں کی خبریں دینے والی ویب سائٹ “آراز نيوز” نیوز کے مطابق تُرک قوم کے خلاف نسل پرستی پر مبنی اس مضمون نے آذریوں کے قومی جذبات کو مجروح کیا ہے اور ان میں شدید ناراضگی کی لہر دوڑا دی ہے”۔
یہ پہلی مرتبہ نہیں ہے کہ ایرانی ذرائع ابلاغ میں تُرک قومیت (جو کُل آبادی کا 25 % ہیں) کی توہین کی گئی ہے۔ گزشتہ نومبر میں بھی ایرانی ذرائع ابلاغ میں تُرک قومیت کی بار بار اہانت پر آذربائیجان صوبے کے تمام شہروں میں احتجاجی مظاہرے کیے گئے تھے۔ مظاہروں کے دوران سیکورٹی حکام کی جانب سے سیکڑوں آذری نوجوانوں کو گرفتار کیا گیا۔ ان میں سے 27 کے خلاف انقلابی عدالت نے 6 ماہ سے 3 سال تک کی جیل کا فیصلہ سنایا۔
دوسری جانب ایرانی پارلیمنٹ میں آذربائیجان صوبے کی نمائندگی کرنے والے ارکان پارلیمنٹ نے شائع ہونے والے مضمون کی سخت مذمت کی ہے۔ مذکورہ ارکان کے نزدیک یہ ایرانی نظام کی جانب سے تُرک اور دیگر قومیتوں کے خلاف منظم نسل پرستانہ اظہار خیال کی کڑی ہے۔
ارکان پارلیمنٹ نے اپنے علاحدہ بیانوں میں کہا ہے کہ ” افسوس ناک امر یہ ہے کہ ایران میں ترکوں ، عربوں اور بقیہ قومیتوں کے خلاف نسل پرستی پر مبنی اہانتوں کا سلسلہ جاری ہے اور اب یہ اس حد تک خطرناک ہوچکا ہے کہ فارسی زبان کے اخبارات اندرون و بیرون ملک اس کو پھیلا رہے ہیں”۔
آذری کارکنان کا کہنا ہے کہ سرکاری اخبار ” طرح نو” کو آذربائیجان صوبے میں پاسداران انقلاب کی انٹیلجنس کی جانب سے سپورٹ کیا جاتا ہے۔ مذکورہ اخبار کے ہم خیال دیگر ذرائع ابلاغ بھی ہیں جن میں ” ايران شمالی” اور “وطن
یولی” اخبارات کے علاوہ “آذريہا” ویب سائٹ شامل ہیں۔

Reference: http://ara.tv/5vhb9

Videos Going Viral

Junaid Jamshed Secret Revealed
Reason Behind the PIA Plane Cr
Junaid Jamshed Ki Namaz-e-Jana
Haroon Rasheed Analysis on Imr
Junaid Jamshed Friend Telling
Live With Dr Shahid Masood –
Waseem Badami Badly Crying Aft
Kal PIA Ka Ek Hadsa Hogaya Ajj
Arshad Sharif’s Analysis
Imran Khan Has Taken A Big Pol