اشتیاق احمد ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ملک ریاست

Posted on November 19, 2015



اشتیاق احمد ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ملک ریاست

اشتیاق احمد ایک انسان کا نام نہیں بلکہ ایک انجمن کا نام تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔ ان کی ساری زندگی علم و ادب کے لیے وقف تھی۔۔۔۔ وہ اپنے طرز تحریر اور اسلوب بیان کی وجہ سے بچوں بڑوں اور خواتین سب میں یکساں مقبولیت رکھتے تھے ۔۔۔۔۔
ایک زمانہ ہو گیا اشتیاق احمد صاحب کو پڑھتےہوئے ۔۔۔ دنیا بدل گئی، شوق بدل گئے ، ترحیحات بدل گئں لیکن اشتیاق احمد سے دلی دلچسپی کم نہ ہو سکی۔۔۔۔۔۔
اشتیاق احمد صاحب نے تقریبا 8 سو ناول اور بے شمار کہانیاں لکھیں۔۔۔ وہ “انسپکڑ جمشید “اور “شوکی برادران” سمیت بے شمار دلچسپ ناولوں کے خالق تھے، اشتیاق احمد ایک علم دوست شخیصت ہونے کے ساتھ سچے عاشق رسول تھے، وہ انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ کے ممبر اور “بچوں کے اسلام” جیسے مشہور رسالے کے مدیر بھی تھے۔۔۔
اشتیاق احمد نام بدل کر ہمیشہ اپنے پرستاروں سے خفیہ رہے ۔۔ لیکن 2 دن پہلے وہ کراچی ایکسپلو سنٹر میں کتابی میلے میں تشریف لائے تو ان کے چاہنے والوں کی لائنیں لگ گئیں ۔۔۔۔وہ خوشی خوشی سب کو آٹوگراف دے رہے تھے ۔۔۔ لیکن ان کے چاہنے والوں کو کیا خبر تھی کہ ان کا محسن محض ایک دن بعد انھیں تنہا چھوڑ جائے گا۔۔ اور یہ ان سے اخری ملاقات ہو گی۔۔۔
یوں اشتیاق احمد صاحب 80 سال کی عمرمیں کل کراچی ائرپورٹ پر اپنے کروڑوں چاہنے والوں کو سوگوار چھوڑ کر دنیا سےرحلت فرما گئے ہیں۔۔ اللہ تعالی ان کی ساری زندگی کی علمی، ادبی اور دینی خدمات کو قبول فرمائے اور انھی کے بدلے انھیں جنت الفردوس مین اعلی ترین مقام عطافرمائے امین

دین حق کے کارخانوں کے وہ کاری گر بھی تھے
ہر قدم میدان افسانہ کے بازی گر بھی تھے
سرسری’ سی ان کے بارے میں ہیں ‘دو باتیں’ فقط
اشتیاق احمد لکھاری بھی تھے، “لکھاری گر” بھی تھے