این اے 122۔۔۔۔۔ ملک ریاست

Posted on October 11, 2015



این اے 122۔۔۔۔۔ ملک ریاست

لاہور میں کل ضمنی الیکشن ہونے جا رہا ہے ،میڈیا رپوڑٹس میں سنا ہے کہ پاکستانی تاریخ کے مہنگے ترین الیکشن ہونے جا رہے ہیں۔۔
کچھ لوگ ایاز صادق کو فیورٹ جبکہ کچھ لوگ علیم خان کی پوزیشن بہتر سمجھ رہے ہیں۔۔
چاہے ایاز صادق جیت جائے یا علیم خان ۔۔۔ ان دونوں کی ہار جیت سے دونوں پارٹیوں کو کوئی خاص فرق نہیں پڑنے والا ۔۔۔ نہ تو ایاز صادق کی ہار سے ن لیگ کی حکومت کو کوئَی خطرہ ہے اور نہ علیم خان کی جیت سے پی ٹی آئِی کو کوئی فائدہ پو گا۔۔۔ یہ الیکشن اس لیے اتنا اہم گیا کہ دونوں پارٹیاں عوامی مقبولیت کا اندازہ لگا رہی ہیں کہ ان کی عوام میں کتنی مقبولیت ہے۔۔۔
جب ایکشن ہو گا تو ضرور ایک جیتے گا اور ایک ہارے گا لیکن ایک بات یاد رکھیں کہ جہاں اجارہ داری قائم ہو گی وہاں کرپشن بدعنوانی سمیت تمام ناجائز کام ڈنکے کی چوٹ پر ہوں گے ۔۔۔لیکن اس کےبرعکس جہاں مد مقابل اور مقابلہ ہو گا وہاں حالات قدرے بہتر ہوں گے
لاہور کےحالات دیکھ کےکر یقین ہو گیا ہے کہ عوام میں شعور بیدار ہو چکا ہے۔۔۔۔ن لیگ کی پنجاب میں برسوں کی اجارہ داری اب قائم نہیں رہی۔۔۔۔۔۔ پہلےان کی یہ خام خیالی تھی کہ ایاز صادق خود ذاتی حیثیت سے الیکشن جیت جائے گا۔۔۔ لیکن ایسا نہ ہو سکا۔۔۔ 8 وقاقی منسٹرز سمیت 34 صوبائی ممبرز کمپین میں بھی دن رات ایک کیے ہوئے تھے۔۔۔ پھر بھی دودھ میں کچھ کالا نظر آیا تو آج محترم وزیراعظم کو خود لاہور جانا پڑا۔۔۔۔
میں صرف یہ کہنا چاہتا ہوں کہ اجارہ داری کسی بھی جگہ ہو چاہیے بازاروں میں ہو منڈی میں یا سیاست کے ایوانوں میں انتہائی خطرناک ہوتی ہے ۔۔۔ اب کم از کم یہ امید پیدا ہو گئی ہے کہ اب ہر جگہ سلیکشن نہیں الیکشن ہو گا اور مقابلہ ہو گا۔۔ اور اس لیے محنت کرنا پڑے گی۔۔۔۔ اور کارگردگی دکھانا ہوگی۔۔۔۔