شہاب نامہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ملک ریاست

Posted on October 6, 2015



شہاب نامہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ملک ریاست
آج میں نے قدرت اللہ شہاب کی مشہور تصنیف ” شہاب نامہ” کو پڑھ کر ختم کیا تو سوچا کہ اتنی اچھی کتاب ہے کیوں نہ اسی پر کچھ روشنی ڈالی جائے تا کہ زیادہ سے زیادہ دوست اس سے پڑھ کر استفادہ کر سکیں۔۔۔
اس کتاب میں قدرت اللہ شہاب نے بچپن سے ریٹائرڈ ہونے کے بعد تک اپنی پوری زندگی کی تمام باتوں اور واقعات جو ان کے ساتھ رونما ہوئے بہت خوبصورت انداز میں تذکرہ کیا۔۔۔کچھ واقعات ایسے ہیں کہ پڑھ کہ بے اختیار ہنسنے کو جی چاہتا ہے جبکہ کچھ واقعات پر آپ چاہتے ہوئے بھی انسو نہیں ضبط کر سکتے۔۔۔
“قدرت اللہ شہاب” اس عظیم شخصیت کا نام ہے جو ایک دیہات میں پسماندگی اور غربت کی زندگی گزارنے کے بعد ملک کی اعلی ترین پوسٹوں پر تعینات رہے۔۔۔ جس میں وہ صدر وزیراعظم کے ساتھ مامور رہتے ہوئے، ڈپٹی کمشنر ، چیف سیکڑی اور غیرملکی سفیر کی حثیت بھی کئی ملکوں میں تعینات رہے ۔۔۔ لیکن قابل فخر بات یہ ہے پھر بھی انھوں نے فرض شناشی اور ایمانداری کو ہاتھ سے کسی طرح نہ چھوڑا۔۔۔
“شہاب نامہ” بلاشبہ ایک بہت خوبصورت کتاب ہے جو پڑھنے والے کو اپنے سحر میں مبتلا کر دیتی ہے ۔۔ یہ کتاب ہنسنے ہنسانے اور رونے رولانے سےبھر پور کتاب ہے۔۔۔۔
میں اپنے تمام دوستوں اور خاص طور پر سرکاری اور نجی اداروں میں اعلی پوسٹوں پر کام کرنے والے حضرات سے درخواست کرتا ہوں کہ وہ یہ کتاب ضرور پڑھیں انشاءاللہ آپ کو بہت مزا بھی آئے گا اور بہت کچھ سیکھنے کا موقع بھی ملے گا۔۔۔ شکریہ