حرم پاک حادثہ اور انکوائری رپورٹ۔۔

Posted on September 17, 2015



حرم پاک حادثہ اور انکوائری رپورٹ۔۔۔۔۔۔۔ ملک ریاست
چند دن پہلے حرم پاک میں کرین حادثے میں تقریبا 107 افراد لقمتہ اجل بن گئے تھے ۔۔۔۔ حادثے کے بعد سعودی عرب سے دنیا بھر کے حکمرانوں نے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔۔ اس دن سعودی شاہ کا صرف ایک بیان نشر ہوا کہ واقعے کی تحقیقات ہوں گی۔۔۔۔
ٹھیک 2 دن بعد تحقیقی اداروں نے رپورٹ” سعودی شاہ ” کو بجھوا دی۔۔۔ رپورٹ میں حادثے کی وحوہات کا جائزہ پیش کیا گیا۔۔۔جس میں کمپنی کو کوتائی کا مرتکب قرار دیا گیا۔۔۔ خدا نخواستہ حادثہ کسی سازش کا نتیجہ نہ تھا صرف کوتائی برتی گئی تھی۔۔۔۔۔
رپورٹ آنے کے بعد “سعودی حکومت” نے “بن لادن کمپنی” جس کا شمار عرب کی سب سے بڑی کمپنی میں ہوتا ہے اسکو کوتائی کا مرتکب قرارپانے پر سعودی عرب میں” بلیک لسٹ ” کر دیاگیا اور کپمنی کے مالکان کے بیرون ملک سفر پر پابندی بھی عائد کر دی۔۔۔ اس کے ساتھ ساتھ فوت شدگان کے لواحقین کے لیے امداد کا اعلان بھی کیا گیا جو تقریبا فی کس 3 کڑور روپے بنتی ہے۔۔۔ اور ان کے خاندان کو شاہی مہمان کے طور پر حچ بھی کرانے کا اعلان کیا گیا ہے۔۔۔
یہاں ایک بات غور طلب ہے کہ جس ملک میں انصاف کا فوری اور کڑا نظام رائج ہو وہاں جرائم کی شرح انتہائی کم ہوتی ہے ۔۔۔ اس واقعے کے بعد اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ وہاں جرائم کیوں کم ہیں۔۔۔ اس لیے کہ وہاں فوری انصاف اور سزا کا کڑا نظام رائج ہے۔۔
ہمارے ہاں انسانی جان کی قیمت بہت سستی ہے ۔۔۔ آئے روز دھماکے اور ایسے حادثے ہوتے ہیں۔۔۔ جس میں سینکڑوں بےقصور لوگ زندگی کی بازی ہار جاتے ہیں۔ لیکن” ڈی سی او” تو دور کی بات مطلقہ تھانے کا” ایس ایچ او” بھی تبدیل یا معطل نہیں ہوتا۔۔۔ چھ چھ مہنےگزرنےکے باوجود انکوائری رپورٹ نہیں آتی۔۔ آ بھی جائے تو مجرموں کو سزا نہیں مل پاتی۔۔۔
یہی وجہ ہے کہ ہمارے ملک میں امن نہیں ہے۔۔اسلیئے کے قانون میں طاقت نہیں ہے۔۔مجال ہےاگر قانون میں طاقت ہواور ایسا انصاف کا نظام قائم ہو اور دہشت گردی کنٹرول نہ ہو۔۔۔ یہ ہو ہی نہیں سکتا۔۔۔ شکریہ