سب بچوں کو ایک ہی جگہ پر رکھنا چایئے۔۔۔۔۔۔۔ ملک ریاست

Posted on September 4, 2015



سب بچوں کو ایک ہی جگہ پر رکھنا چایئے۔۔۔۔۔۔۔ ملک ریاست

کل کراچی کے افسوسناک واقعے پرجو وجوہات مجھے سمجھ میں آئی۔۔۔ میں اپنی تحریر میں لایا تھا۔۔۔۔ ورنہ اس کے علاوہ بھی بہت ساری وجوہات ہیں جو ایسے واقعات کے محرک بن سکتےہیں ۔۔۔
واقعے کے بعد میڈیا نے اس واقعے کو بالکل سرسری انداز میں دکھایا ۔۔۔۔ اور ماسوائے ایک عد چینل کے کسی نے پوری خبر نہیں دی۔۔۔۔ میں سمجھتا ہوں یہ میڈیا کا بہت اچھا اقدام تھا۔۔۔۔ اب سوال پیدا ہوتا کہ اگر ایسا کچھ کسی دینی مدرسے کے طالب علم سے ہو جاتا تو کیا میڈیا اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کا یہی رویہ ہوتا؟
ابھی تک لندن، امریکہ اور اقوام متحدہ سے مذمتی بیان جاری ہو چکے ہوتے ۔۔۔ دہشت گردی کی کئی دفعات کے ساتھ مقدمے بن جاتے اور مدرسہ انتظامیہ اور شک کی بنیاد پر بچے کے پورے محلے کو اٹھا کر جیل کی سیر کرائی جاچکی ہوتی۔۔۔۔۔۔۔۔
حتی کہ وہ بھی بچے ہیں اور یہ بھی۔۔ پھر اتنی ناانصافی کیوں برتی جاتی ہے کیا دینی مدارسے کے بچے ہمارے بچے نہیں ہوتے، کیا ہمارے بھائی نہیں ہوتے کیا وہ خدانخواستہ پاکستانی نہیں ہوتے ۔۔۔ جو اس قدر زیادتی کا شکار ہوتے ہیں۔۔۔
اس طرح کی چند باتیں ہیں جن سے شدت پسندی پھیلتی ہے ۔۔۔ اگر اس بڑھتی ہوئی شدت پسندی کو روکنا ہے کو اس ناانصافی کو بھی ختم کرنا ہو گا۔۔ ہمیں سکول اور مدرسے کے بچوں کو ایک ہی جگہ دیکھنا ہو گا۔۔۔۔ جب ہمارا معاشرہ، حکومت اور میڈیا پر دینی مدرسے کے کسی اچھی کام کی پذیرائی نہیں ہو تی اور اگر کچھ غلط ہو جائے تواسمان سرپر اٹھا لیا جاتا ہے۔۔
یہ سب باتیں اہل مدارس کی سوچ میں نفرت پیدا کرتی ہیں جو بعد میں نقصان کا باعث بنتی ہیں ۔۔۔ وہ یہ مسلسل زیادتی دیکھ کر اپنے آپ کو کسی اور دنیا کا باسی سمھنے لگتے ہیں۔۔ شکریہ