پاکستان کا سپاہ سالار

Posted on June 18, 2015



پاکستان کا سپاہ سالار ۔۔۔۔

بہت کم لوگ جانتے ہونگے کہ راحیل شریف نے چیف آف آرمی سٹاف بننے سے پہلے ہی پاک فوج کی جنگی ڈاکٹرائن میں دو بنیادی تبدیلیاں کی تھیں۔ پاکستان کے خلاف انڈین جنگی حکمت عملی “کولڈ سٹارٹ ڈاکٹرائن ” کے جواب میں پاک فوج کی جانب سے ” عظم نو ” مشقوں کا آغاز اسی نے کروایا تھا اور اسی کے اصرار پر پاکستان کے خلاف لڑنے والے دہشت گردوں کو اولین خطرہ قرار دیا گیا تھا۔

راحیل شریف ہی آپریشن ضرب عضب کے اصل ماسٹر مائنڈ اور معمار ہیں ۔ یہاں تک کہا جاتا ہے کہ وزیراعظم تک کو آپریشن شروع ہونے کے ایک دن بعد آگاہ کیا گیا تھا۔ اس آپریشن نے دہشت گردوں کی کمر توڑ دی ہے ۔ پاکستان بھر سے دہشت گردوں کے تقریباً تمام مراکز صاف کر دئیے گئے ہیں اور دہشت گردی میں نمایاں کمی آئی ہے ۔۔۔۔

راحیل شریف کے حکم پر پاکستان نے پہلی بار افغانستان اور انڈیا کی پناہ میں موجود دہشت گردوں کا افغانستان تک پیچھا کیا اور پاکستانی ہیلی کاپٹرز نے کنڑ میں دہشت گردوں کے مراکز پر کامیاب حملے کیے ۔

پشاور حملے کے بعد راحیل شریف نے بطور چیف آف آرمی سٹاف افغانستان کا ایک طوفانی دورہ کیا جس میں مبینہ طور پر افغان حکومت کو اسلام دشمنوں کی پشت پناہی کرنے پر “موثر” وارننگ دی اور نتائج سے خبردار کیا ۔ ساتھ ہی اس بات پر قائل کیا گیا کہ پاکستان افغانستان کے اندر اینٹلی جنس آپریشن کرے گا جس کے نتیجے میں افغان حکومت کو پاکستان اینٹلی جنس کی نشادہی پر پشاور سکول حملے میں ملوث 5 دہشت گرد گرفتار کرنے پڑے ۔

سیاست دانوں کے تمام تر تحفظات کے باوجود انکو سزائے موت کی بحالی اور آرمی کورٹس کے قیام پر مجبور کیا گیا۔ جس پر بعض سیاست دان رو پڑے تھے ۔

اسلام آباد کے قریب ہونے والی ” جمہوری محاذ آرائی ” جس میں لوگ مر رہے تھے مداخلت کر کے روک دیا ۔ راحیل شریف کی مداخلت کے بعد حکومت اور مظاہرین دونوں ٹھنڈے ہوگئے ۔۔۔۔

ملک میں پیٹرول نایاب ہو گیا تو راحیل شریف نے نواز شریف سے ” اہم ملاقات ” کی جس کے بعد فوراً ہی ملک بھر میں دوبارہ پیٹرول دستیاب ہوگیا۔

راحیل شریف اور عاصم باجوہ کی امریکہ اور برطانیہ یاترا کے بعد سفارتی محاذ پر انڈیا کو پے در پے جھٹکے لگے ۔۔۔۔معروف صحافی اور اینکر صابر شاکر کے مطابق پاکستان کے دورے پر آئے ہوئے جان کیری اس وقت حیران رہ گئے جب انکو پاک فوج کی جانب سے ” فضل اللہ ” کی ایک انڈین جنرل سے گفتگو سنوائی گئی جس میں انڈین جنرل ٹی ٹی پی کے امیر کو ہدایات دے رہا تھا ۔ ساتھ ہی ان کو کئی اور ایسے ناقابل تردید شواہد پیش کیے گئے جن سے ثابت ہوتا تھا کہ ٹی ٹی پی اور بی ایل اے کو انڈیا کنٹرول کر رہا ہے ۔ انکے علاوہ جان کیری کو ٹھوس شواہد پیش کیے گئے کہ ایل او سی کی خلاف ورزی بھی انڈیا کی جانب سے ہو رہی ہے۔

جان کیری کے جی ایچ کیو کے دورے کے بعد انڈیا میں سخت بے چینی پائی گئی اور انہیں حیرت ہوئی کہ انڈیا کے لمبے دورے کے بعد جان کیری نے اپنے وعدے کے مطابق پاکستان کو کوئی ” سخت پیغام ” دینے کے بجائے پاکستانی موقف کی تائید کیوں کی ؟؟

راحیل شریف کی ان کوششوں کے نتیجے میں امریکہ نے پہلی بار ٹی ٹی پی کے امیر ” ملا فضل اللہ ” کو مجبوراً دہشت گرد تسلیم کر لیا ۔ جس پر انڈیا کو مزید تکلیف ہوئی ۔

راحیل شریف نے قطر کے شیخ سے اہم ملاقات کی جس کے بعد قطر نے کچھ ایسے فیصلے کیے جو انڈیا کو سخت ناگوار گزرے ہیں۔

راحیل شریف کی آمد کے بعد بلوچستان میں انڈیا شکست سے دوچار ہے ۔ نہ صرف دہشت گردوں کی کاوائیوں میں نمایاں کمی آئی ہے بلکہ پہلی بار روزانہ کی بنیاد پر دہشت گرد سرنڈر کر رہے ہیں ۔

پاکستانی میڈیا پر پہلی بار انڈین ایجنسی ” را” کا نام لیا جانے لگا ہے ۔

آپ یہ بھی نوٹ کریں کہ راحیل شریف کی آمد کچھ عرصے بعد انڈیا میں خالصتان تحریک دوبارہ زندہ ہوگئی ہے اور کشمیر میں پاکستان زندہ باد کے نعرے دوبارہ گونج رہے ہیں ۔

یہ راحیل شریف کے چین کے دورے اور آپریشن ضرب عضب ہی کے نتائج ہیں کہ چین نے پاکستان میں وہ سرمایہ لانے کا فیصلہ کر لیا ہے جو مشرف دور میں طے ہوا تھا ۔ اکانامک کوریڈور اور اس کے لیے 46 بلین ڈالر کی منظوری پاکستان کو زبردست معاشی استحکام فراہم کر سکتی ہے ۔ ( جہاں تک نواز شریف کا تعلق ہے یہ قصہ شاہد مسعود سے سنئے کہ نواز شریف کی وجہ سے ابھی تک چین اس پراجیکٹ پر کام شروع نہیں کر رہا )

انہی ملاقاتوں میں راحیل شریف نے چین سے دشمن ملک میں کئی ہزار کلومیٹر اندر تک نگرانی کرنے والے 4 جدید ترین اواکس طیاروں کا معاہدہ کیا ۔ اس سے پہلے پاکستان کے پاس اس قسم کے طیارے صرف دو تھے جن میں سے ایک ٹی ٹی پی نے تباہ کر دیا تھا ۔

آرمی چیف کی قیادت میں پاک فوج کی جانب سے سمندر میں 50 ہزار مربع کلومیٹر مزید علاقے کا حصول اور پاکستانی سمندری حدود میں اضافہ ۔۔۔۔

راحیل شریف کی قیادت میں پاک آرمی نے ایم کیو ایم کے خلاف گھیرا تنگ کر دیا جس پر الطاف بھائی کی چیخیں پورے پاکستان میں سنی گئیں ۔ پہلی بار نائن زیرو پر چھاپہ مارا گیا اور متعدد دہشت گردوں کی گرفتاری عمل میں لائی گئی جن میں فیکٹری میں مزدوروں کو زندہ جلانے والے بھی شامل ہیں ۔۔

دوسری طرف اس وقت راحیل شریف نے پیپلز پارٹی کی کرپشن اور دہشت گردی پر بھی شکنجہ کس دیا ہے جس پر آصف زرداری بری طرح بلبلا رہا ہے ۔ نہ صرف چند دن میں اربوں روپے برآمد کر لیے گئے ہیں بلکہ مفرور عزیر بلوچ کو بھی پاکستان واپس لایا گیا ہے جس نے اہم ترین انکشافات کیے ۔۔

راحیل شریف اس وقت روس کے اہم دورے پر ہیں ۔ وہ کافی عرصے سے روس سے تعلقات بحال کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں جن کے نتیجے میں ۔۔۔
پہلی بار روس نے پاکستان کو اسلحے کی فروخت پر سے پابندی ہٹا دی ۔
پاکستان میں ابتدائی طور پر دو بلین ڈالر کی سرمایہ کاری کرنے کا فیصلہ کر لیا۔
روسی افواج اور پاک فوج کی مشترکہ جنگی مشقوں کا فیصلہ کیا گیا ۔۔
اور سب سے بڑھ کر پاکستان کی شنگھائی کواپریشن آرگنائزیشن میں شمولیت کے لیے لائحہ عمل طے کیا جا رہا ہے جس کے بعد پاکستان پر حملہ روس پر حملہ تصور ہوگا اور روس، چین اور پاکستان ملکر اپنا دفاع کرینگے ۔ اس تنظیم کا حصہ بننے کے بعد انڈیا کے لیے پاکستان پر حملہ ناممکن ہوجائیگا۔

اللہ راحیل شریف کو لمبی زندگی دے ۔ پتہ چل رہا ہے کہ اس کے گھر دو نشان حیدر کیوں گئے ہیں ۔ اسکی رگوں میں بہتا ہوا خون اپنا آپ دکھا رہا ہے ۔۔۔

تحریر شاہدخان