Muhabbat Akhir Hy Kia

Posted on March 6, 2015



ایک لڑکی “عورت” ذات کے مقام سے اسی وقت گر جاتی ہے- جب وھ کسی کی گرل فرینڈ بننا قبول کر لیتی ہے-
احمق یہ نہیں جانتی کہ جو لڑکا اسے سچ میں چاہتا ہو گا- وہ اسے نکاح کے باعزت طریقے سے بیوی کا درجہ دے گا-، نا کہ گرل فرینڈ بنا کر اسے پارکوں یا ہوٹلوں میں گھومے گا-
محبت کیا ہے؟؟
محبت کیا ہے؟؟
ہم لوگ مادہ پرست ہیں ہماری محبتیں تو اب غیر محرموں، مال و دولت، نفسانی خواہشات، دنیاوی ترقی، دنیاوی شان و شوکت تک رہ گئی ہیں ہم اس محبت میں اتنے اندھے ہو چکے ہیں کہ حلال و حرام کا فرق تک دکھائی نہیں دیتا
آئیے میں آپ کو دکھاتی ہوں محبت کیا ہوتی ہے
چودہ سو سال قبل رات کی تاریکی میں الله کے رسول صلی الله علیه وسلم دو جہانوں کے سردار، خیر البشر صلی الله عليه وسلم گڑ گڑا کر الله سے ان لوگوں کے لیے معافی اور عفو و درگزر کی درخواست کر رہیں جن لوگوں کا ابھی وجود تک نہیں ہے
یہ ہے محبت
رسول کریم صلی الله عليه وسلم ہم لوگوں کے لیے اتنا روتے اتنا روتے کہ الله پاک کو فرشتہ بھیجنا پڑ گیا اتنا تو نہ رویا کر
یہ ہے محبت
اپنے بیٹے کا انتقال ہو گیا بہت غمزدہ ہوئے حضرت عائشہ صدیقہ رضی الله تعالیٰ عنہا نے فرمایا
یا رسول الله صلی الله علیہ وسلم آپ نے فرمایا تھا کہ الله پاک نے ہر نبی کو ایک دعا دی ہے اس دعا میں الله پاک سے جو مانگا جائے الله پاک ضرور قبول کرتا ہے آپ الله پاک سے دعا کریں کہ ابراہیم کو دوبارہ زندگی دے دے
آپ صلی الله عليه وسلم نے فرمایا
نہیں عائشہ! میں نے وہ دعا قیامت والے دن کے لیے سنبھال کر رکھی ہے اپنی امت کے لیے مانگوں گا
یہ ہے محبت
قیامت کے دن جب دوزخ کو لایا جائے گا اس کی خوفناک چنگھاڑ سن کر نبیوں سمیت تمام انسان گھٹنوں کے بل گر جائیں اور گڑ گڑائیں گے
ربی نفسی نفسی،ربی نفسی نفسی
الله ہمیں بچا لے الله ہمیں بچا لے
کیا آدم علیه السلام، کیا نوح علیه السلام، کیا ابراہیم علیه السلام، کیا موسی علیه السلام اور کیا عیسی علیه السلام
سب اپنی امتوں کو بھول جائیں گے سب کو ایک ہی نوحہ ہو گا
ربی نفسی نفسی ،ربی نفسی
الله ہمیں بچالے ، الله ہمیں بچا لے
اس خوفناک اور دل دہلا دینے والے منظر میں بھی وہ ذات کریم سب سے جدا ہو گی صلی الله علیه وسلم
جو اس وقت بھی یہیں فرمائیں گے
ربی امتی امتی،ربی امتی امتی
اے الله میری امت کو بچا لے، اے الله میری امت کو بچا لے
یہ ہے محبت
ایک بار آپ صلى الله عليه وسلم جنت البقیع کی طرف نکلے، اہل قبور کو سلام کیا اور صحابہ کرام سے فرمایا: میری خواہش ہے کہ اپنے بھائیوں کو دیکھ لیتا صحابہ نے عرض کیا : اے الله کے رسول صلی الله عليه وسلم کیا ہم آپ کے بھائی نہیں ہیں ؟
آپ صلى الله عليه وسلم نے فرمایا: تم لوگ میرے ساتھی ہو ، میرے بھائی وہ لوگ ہیں جو ابھی تک نہیں آئے۔۔ جو مجھے بنا دیکھے مجھ پر ایمان لائیں گے۔۔ میرا کلمہ پڑھیں گے ۔
یہ ہے محبت
حضرت عائشہ صدیقہ رضی اﷲ عنہا بیان فرماتی ہیں کہ جب میں نے حضور نبی اکرم صلی الله علیه وآله وسلم کو خوشگوار حالت میں دیکھا تو میں نے عرض کیا : یا رسول الله! الله تعالیٰ سے میرے حق میں دعا فرمائیں، تو آپ صلی الله علیه وآلہ وسلم نے فرمایا: اے الله! عائشہ کے اگلے پچھلے، ظاہری و باطنی، تمام گناہ معاف فرما
(ایسا حضور نبی اکرم صلی الله علیه وآله وسلم نے ازراہ مزاح فرمایا) یہ سن کر حضرت عائشہ رضی اﷲ عنہا اتنا ہنسیں یہاں تک کہ ان کا سر آپ صلی الله عليه وآله وسلم کی گود میں آ پڑا
(یعنی ہنسی سے لوٹ پوٹ ہو گئیں)
اس پر حضور نبی اکرم صلی الله علیه وآله وسلم نے فرمایا :کیا میری دعا تمہیں اچھی نہیں لگی ہے؟ انہوں نے عرض کیا : یہ کیسے ہو سکتا ہے کہ آپ کی دعا مجھے اچھی نہ لگے،
پھر حضور نبی اکرم صلی الله علیه وآله وسلم نے فرمایا : الله کی قسم! یہ دعا تو میں ہر نماز کے بعد اپنی امت کے لیے مانگتا ہوں۔‘‘
یہ ہے محبت
اب خود سے سوال کریں اتنی محبت جو نبی کریم صلی الله عليه وسلم نے ہم سے کی: کیا ہم اس محبت کا عشر عشیر بھی لوٹایا؟
کہیں ایسا تو نہیں روشن خیالی کے نام پر سنتوں کا قتل کر کر کے ہم لوگ اس ذات گرامی سے بے وفائی کرتے جا رہے ہیں جو قیامت کے ہولناک دن بھی اپنی وفا نبھائیں گے؟
خدا کے لیے سوچیئے ضرور سوچیئے
روزانہ رات کو سونے سے قبل اپنے دن بھر کے اعمال پر نظر دوڑا لیا کریں ان کا محاسبہ کر لیا کریں کہ ہم نے آج محبت کا کتنا حق ادا کیا؟ جو روز اپنا حساب کرتا ہے قیامت کے دن اس کا حساب آسان ہو گا
الله پاک ہم سب کے دلوں میں نبی کریم حضرت محمد صلی الله علیه وسلم کی محبت پیدا فرمائے: آمین
محبت کیا ہے
میں نے پوچھا زندگی سے
پھولوں سے
آسماں سے
زمیں سے
لیکن کوئی تسلی بخش جواب نہیں ملا
پھر؟ ؟ ؟ ؟ ؟
تاریخ ہاتھ پکڑ کر پیچھے لے گئی
چودہ سو برس پیچھے
رات تھی
تارے بھی سو چکے تھے
ایک عظیم ہستی سجدے میں جھکی
گیلی آنکھوں کے ساتھ سوالی بن کے
ایک ہی دعا دہرا رہی تھی
“یا الله میری امت کو بخش دے، یا الله میری امت کو بخش دے ”
دل و دماغ نے جھنجھوڑ کے کہا
..”اے نادان انسان” دیکھ یہ محبت ہے ٠٠