اسلامی دنیا پر حکومت کرنے کے امریکی خواب

Posted on February 9, 2015



اسلامی دنیا پر حکومت کرنے کے امریکی خواب

امریکی ایجنسیوں کے خریدے ہوئے نام نہاد وہابی دہشت گرد جو اپنے آپ کو جہان اسلام کا ٹھیکیدار سمجھتے ہیں اور پورے جہان اسلام کی رہبریت کے خواب دیکھتے ہیں وہ اپنے اس مقصد کے حصول کے لیے دوسرے ممالک سے افراد کو جذب کرتے ہیں اور کتب خانوں کے علاوہ دیگر امکانات ان کے لیے فراہم کرتے ہیں تاکہ وہ ان کتب خانوں میں وہابیت کا اچھے طریقے سے مطالعہ کریں اور اس کے بعد اپنے اپنے ممالک میں جا کر علمی مراکز قائم کریں اور لوگوں کو اس فرقہ ضالہ کی طرف دعوت دیں۔
آج کل امریکی خارجہ پالیسیوں میں سے ایک پالیسی امریکی اسلام کی تبلیغ ہے اور سعودی عرب میں مبلغین کی تربیت کا کام بہت بڑے پیمانے پر ہو رہا ہے سعودی عرب میں نہ صرف وہابی افکار کی تعلیم دی جاتی ہے بلکہ اس کے ساتھ ساتھ دوسرے فرقوں سے مقابلے کی ٹکنیکیں بھی سکھائی جاتی ہیں انہیں یہ سکھایا جاتا ہے کہ ظاہری طور پر نرم لہجے اور خوش اخلاقی سے لوگوں کے ساتھ معاشرت کی جائے اور انہیں دھیرے دھیرے اپنے افکار کی طرف کھینچا جائے لیکن جہاں پر یہ محسوس ہو کہ لوگ ان کے افکار کو قبول کرنے کے لیے تیار نہیں ہیں وہاں اندرونی طور پر اپنے آلہ کار تیار کر کے انہیں موت کے گھاٹ اتار دیا جائے۔ لہذا وہابی واضح طور پر یہ فتویٰ صادر کرتے ہیں کہ وہ لوگ وہابی افکار کے قائل نہیں ہیں وہ واجب القتل ہیں ان کا خون کرنا جائز ہے اب چاہے وہ شیعہ مذہب سے تعلق رکھنے والے ہوں چاہے کسی سنی فرقے سے۔ ان کی نگاہ میں نہ شیعہ مسلمان ہیں اور نہ ہی سنی۔ وہ پہلی فرصت میں چرب زبانی سے لوگوں کو اپنے قریب کرنے کی کوشش کرتے ہیں اور اگر یہ طریقہ موثر ثابت نہ ہو تو قتل و غارت ان کا دوسرا حربہ ہوتا ہے۔
لہذا مسلمانوں کو بیدار ہو جانا چاہیے کہ اسلامی ممالک مکمل طور پر وہابی تبلیغ کی لپیٹ میں ہیں جہاں بظاہر امن و شانتی ہے وہاں وہابی اپنی پہلی روش پر عمل پیرا ہیں اور نرم و چرب زبانی سے وہابیت پھیلانے میں مشغول ہیں اور جہاں قتل و غارت ہے وہاں دوسرا طریقہ کار، کارفرما ہے۔ ایشیا کے تمام ممالک، افریقہ، پورپ اور امریکہ حتی کہ دنیا کو کوئی ملک ایسا نہیں ہے جہاں وہابیت اپنے پنجے گھڑنے میں مصروف نہ ہو۔ حقیقت تو یہ ہے کہ یہ وہابیت آخری زمانے کا وہ دجال ہے جس کی ظہور منجی عالم بشریت سے پہلے وجود میں آنے کی پیشگوئی کی گئی ہے۔
وہابیت کا دوسرا طریقہ پہلے سے زیادہ خطرناک اور وحشت انگیز ہے جو اسلام کے نام پر، دین خدا کے نام پر، مسلمانوں اور خدا و رسول کا کلمہ پڑھنے والوں کی گردنوں پر چھری چلاتے ہیں!۔ دنیا اس بات کی گواہ ہے کہ صرف وہابی ٹولہ ایسا ہے جو اپنے شیطانی اور عقل و منطق سے عاری افکار کے ذریعے ہزاروں مسلمان مردوں عورتوں اور بے گناہ بچوں کے خون کی ندیاں بہا رہا ہے۔
اس فرقہ ضالہ کے کارنامہ، شام، پاکستان، عراق، افغانستان اور دیگر ممالک میں کسی پر پوشیدہ نہیں ہیں۔ درحقیقت یہ نام نہاد اسلامی فرقہ اسلام کی جڑوں کا مخالف ہے ایک طرف سے نرم جنگ کے ذریعے مسلمانوں کو گمراہ کر کے دین محمدی (ص) سے ہٹا کر دین امریکی کی طرف لے جا رہا ہے اور دوسری طرف سے مسلمان سے مسلمان کا گلہ کٹوا کر غیر اسلامی ممالک میں اسلام کو منفور ترین، تشدد پسند اور محبت و جذبات سے عاری دین کے عنوان سے پہچنوا رہا ہے۔ اس امریکی فرقہ کی پوری یہ سازش ہے کہ دین اسلام کا مکمل طور پر نقشہ بدل کر رکھ دے تاکہ اسلام کا نام جب زبان پرآئے تو اس سے جو چیز لوگوں کے ذہنوں میں تبادر کرے وہ قتل ہو، تشدد ہو، خون ہو، بم دھماکہ ہو، انسان کشی ہو۔ تاکہ دنیا کا کوئی غیر مسلم اسلام کی طرف رخ کرنے کی سوچ بھی نہ سکے۔ یہ اسرائیل اور امریکہ کی سب سے بڑی سازش ہے۔
جب عصر حاضر میں، اس پیشرفت زمانے میں، جدید ٹکنالوجی نے اسلام کے متعلق ریسرچ کے ذرائع کثرت سے ہموار کر دئے تو عیسائی جوق در جوق اسلام میں داخل ہونے لگے۔ ایسے میں عالمی استکبار کے پاس سوائے اس کے کوئی دوسرا چارہ کار نہیں بچا تھا جس کے ذریعے وہ غیر مسلمانوں کو اسلام سے متنفر کر سکیں۔ ان کے پاس صرف ایک ہی چارہ کار تھا کہ وہ خود مسلمانوں کے درمیان ایسا فرقہ پیدا کریں جو بظاہر مسلمان ہوں لیکن باطنی طور پر ان کے مقاصد کو پورا کرتے ہوں۔ وہابیت امریکہ اور عالمی استکبار کا پیدا کردہ فرقہ ہے جس کا مقصد صرف محمدی اسلام کو نابود کرنا اور امریکی اسلام کو دنیا میں نافذ کرنا ہے۔
مسلمانوں کو چاہیے کہ ابھی بھی بیدار ہو جائیں صبح کا بھولا ہوا اگر شام کو گھر آجائے تو اسے بھولا ہوا نہیں کہتے۔ ابھی بھی وقت ہے شیعہ اور سنی مل کر اس امریکی فرقے کے خلاف بیک زبان آواز اٹھائیں اور اس کے جرائم آشکار کریں۔ شیعہ سنی علماء کھلے عام یہ اعلان کریں کہ اس فرقہ کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں یہ امریکی اسلام کا پرچار کرنے والا اور امریکی مقاصد کو پایہ تکمیل تک پہنچانے والا فرقہ ہے تاکہ جاہل عوام ان کی مکاریوں سے بچ سکیں۔ تمام شیعہ سنی مسلمان مل کراگر میدان عمل میں اس فرقہ ضالہ کا ڈٹ کر مقابلہ نہیں کریں گے تو یاد رکھیں کہ یہ دجالِ زمانہ پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے لے گا اور اس کے بعد جو ان کے افکار ماننے کو تیار نہیں ہوں گا اس کی گردن ہو گی اور وہابیوں کی تلوار۔ ابھی وقت ہے خود کو بھی بچائیں اور اپنے دین کو بھی بچائیں جس کے لیے ہمارے رسول نے پتھر کھائے، جس کے لیے ہمارے رسول نے زخم کھائے جس کے لیے ہمارے رسول نے فاقے کئے۔ آو اس رسول کا کلمہ پڑھنے والے مسلمانو! اسلام کو بچاو۔ اسلام تمہیں پکار رہا ہے، اسلام کو تمہاری ضرورت ہے۔