قومی طاقت کا راز

Posted on June 7, 2014



ایک قوم کی قوت
یہ ایک چھوٹی سی خوبصورت نظم کا عنوان ہے جو رالف والڈو امرسن نے لکھی ہے، اس کے لکھنے کا مقصد یہ تھا کہ کسی قوم کی کامیابی کا راز کیا ہے؟ اور شاعر نے اس راز سے پردہ اٹھایا ہے۔ کہ کسی قوم کی کامیابی اسکی افرادی قوت میں ہوتی ہے نا کہ سونے یا زیورات میں یعنی مال ملکیت وغیرہ۔۔
اس نظم میں یہ پیغام دیا گیا ہے کہ کوئی قوم کیسے مظبوط ہوتی ہے اور اس قوم میں کونسی خوبیاں ہونی چاہیں؟ وہ لوگ جو اپنی قوم کو طاقتور بناتے ہین وہ ہی عظیم لوگ ہوتے ہیں۔ وہ اپنی قوم کی خوشحالی کے لیے محنت کرتے ہیں۔ وہ اپنی قوم کی عزت کیے لیے اور سچ کے واسطے لڑتے ہیں۔ وہ خود غرض نہیں ہوتے۔ وہ اس بات پر یقین کامل رکھتے ہیں کہ جو کچھ اجتماعی یا انفرادی طور پر کرتے ہیں ان کا سارا فعل اور عمل ان کی قوم کی کردار، وقار اور ناموس کی نمائندگی کرتا ہے۔ وہ کبھی بھی ایسی حرکت نہیں کرتے جس سے ان کے قومی وقار یا ناموس پے کوئی دھبا لگتا ہو۔ ان کو اپنی قوم کو مظبوط اور طاقتور بنانے کیے لیے ان کو کسی دولت یا سونی کی ضرورت نہیں ہوتی ہے۔ یہ کسی قوم کی طاقت اور پختہ ازم ہوتا جو اس کو مظبوط بناتا ہے۔ ھمارے پاس ایسی اقوام کی تاریخ بھری پڑی ھے جو چھوٹی تھیں لیکن ان کا پاس عظیم لوگ تھے جنہوں نے اپنی قوم کو ترقی اور خوشحالی کے سب سے اونچے مقام پر لے گئے۔ بہادر لوگوں کے خوبیا یہ ہوتی ہیں کہ وہ سوتی نہیں ہیں، وہ اس وقت بھی کام کرتے رہتے ہیں جب دوسرے سو رہے ہوتے ہیں۔ وہ نڈر اور دلیر لوگ ہوتے ہیں جو زندگی کی ہر آنے والی مشکل کا مرد بن کر مقابلہ کرتے ہیں۔ وہ ایسے بزدل نہیں ہوتے جب کوئی مشکل وقت آجائے تو اس سے بچنے کے لیے پیتھ پھیر کر بھاگ جائیں بلکہ وہ میدان میں کھڑے رہتے ہیں۔ وہ اپنی قوم کی بنیادیں بہت گہرائی میں رکھتے ہیں اور اس پلرز کو آسمانوں کی بلندیوں تلک لے جاتے ہیں۔ یہ ہی وہ عظیم لوگ ہوتی ہیں جو دنیا کے حقیقی ھیرو ہوتے ہیں۔ اگر کسی قوم کے پاس ایسے لوگ ہوں تو وہ قوم بہت ہی خوشنصیب ہوتی ہے۔
میں قارئین سے یہ التماس کرتا ہوں کہ وہ ذرا اس نظم کے خلاصے کو پڑھ کر بتائیں کہ کیا ھمارے قوم میں ایسی کوئی خوبی ہے؟ قوم کو تو چھوڑو ھمارے کسی عوامی نمائندے میں ایسی خوبیاں ہیں جو اس غریب قوم کو روزانہ سبز باغ دکھا کر الو بنانے کی کوشش کرتے رہتے ہیں۔ جب بھی قوم کو مشکل پڑتی ہے تو ھمارے لیڈر ملک چھوڑ کر بھاگ جاتے ہیں اور پھر اپنی قوم اور ملک کی بدنامی کا سبب بھی بنتے ہیں۔ نواز شریف بھاگا، آصف پے سوئزر لینڈ میں کیس چلا، اب الطاف بھائی منی لانڈرنگ کیس بھگت رہیں ہیں، اللہ سے دعا ہے کے وہ اس سے باعزت بری ہوں اور ملک و قوم بدنامی سے بچ جائے۔