For Altaf Bhai with Love

Posted on June 4, 2014



ایسی دل خراش و منحوس خبر اور وہ بھی صبح صبح ، یقین جانیے کچھ یوں بدحواس ہوا کہ چاۓ کو پانی سمجھ کر پی گیا اور پانی کو چاۓ سمجھ کر سڑکیاں لیتا رہا
پندرہ منٹ تک لندن پولیس کو جی بھر کے صلواتیں سنانے اور بد دعائیں دینے کے بعد سولھیویں منٹ کو سٹور کے کاٹھ کباڑ میں سے ایک پرانا ٹائر مل ہی گیا
کھینچ کر باہر نکالا ، زور سے زمین پر پٹخا ، چار ٹھڈے مارنے کے بعد پیٹرول چھڑک کر آگ لگا دی ، دھواں اڑ کر فضا میں بلند ہوا تو کچھ جان میں جان آئی
جلتے ٹائر کو ایک بار پھر ٹھڈا مار کر جئے الطاف کا نعرہ بلند کیا تو کچھ ایسی روحانی تسکین ملی کہ بیان سے باہر

ہوا کچھ یوں کہ آج کافی لیٹ جاگا، چولہے پر چاۓ چڑھانے کے بعد حسب عادت ٹی وی آن کیا تو فلک شگاف نعرے سنائی دئیے
یہ گلیاں کس کی ، بھائی کی
یہ محلے کس کے ، بھائی کے
کراچی کس کا . بھائی کا
اور پھر یہ روح فرسا خبر سننے کو ملی کہ بھائی کو لندن کے ناہنجار پلسیے پکڑ کر لے گۓ اور کراچی میں نائن زیرو کے باہر پر امن احتجاج کیا جا رہا ہے
ساتھ ساتھ ان جلی ہوئی بسوں ، موٹر سائیکلوں، رکشوں اور ٹائروں کی فوٹیج بھی دکھائی جانے لگی جنھیں ان پر امن مظاہرین نے انتہائی پرامن طریقے سے نذر آتش کیا تھا
بس مت پوچھیے کہ باباۓ قوم کی گرفتاری کی خبر سن کر دل ناتواں پر کیا گزری ، اور اس پر مستزاد کہ اسی لندن شہر میں میرے ہوتے ھوے ایسی اندھیر نگری…
قومی غیرت اور حب الوطنی کے جذبات میں بپھر کر پھر وھی کیا جو ایسے حالت میں میرے جیسے اکثر پاکستانی کیا کرتے ہیں ، وہی جو پہلے پیرا گراف میں بیان کیا

اس غیر متوقع طوفاں سے آشنائی کے بعد بحر کی موجوں میں اضطراب کچھ ایسا ہے کہ اتنا وقت گزر جانے کے بعد بھی تھم نہیں رہا ، جب کراچی سے جلاؤ ،گھیراؤ کی خبریں سنتا ہوں تو خود پر ملامت کرنے کو جی چاہتا ہے ، موقع واردات سے ہزاروں میل دور بیٹھے میرے وہ باہمت بھائی کروڑوں کی املاک جلا چکے ہیں اور میں ایک ٹائر جلا کر مطمئن بیٹھا ہوں باوجود اس کے کہ میں اسی لندن شہر میں موجود ہوں . حیف ہے مجھ پر

بس بہت ہو گیا الطاف بھائی، آپ کے ایک اشارے کے منتظر ہیں ہم اور پھر دیکھیے گا لہو کیسے چھلک کر باہر آتا ہے
تجویز میں خود ہی پیش کے دیتا ہوں ، یہاں مشرقی لندن میں میں واقع ویسٹ فیلڈ شاپنگ سینٹر کیسا رہے گا ، سینکڑوں دکانیں ہیں . چند منٹ کا کام ہے اور سب کچھ جل کر خاکستر، گوروں پر ایسی دھاک بیٹھے گی کہ آئندہ آپ کو ہاتھ لگانے سے قبل دس بار سوچیں گے ..کیا خیال ہے ؟
زیادہ نہیں بس پندرہ ، بیس سرفروش کافی ہوں گے اس کام کے لئے …آپ بس انہیں بھیج دیجئے باقی میں خود سنبھال لوں گا
آج شام چھ بجے میں سٹریٹفورڈ سٹیشن کے باہر اپ کے بندوں کا انتظار کروں گا
پلیز ضرور بھیجیے گا کیونکہ ٹائر میرے پاس ایک ہی تھا جو جلا چکا ہوں