پاکستانی فوج کے خلاف سازش، اور ایک نجی ٹی وی چینل

Posted on April 20, 2014



ایک نجی چینل گذشتہ کئی سالوں سے پاک فوج کے خلاف پرچار میں مصروف ہے، اور حامد میر جو کل ایک فائرنگ کے واقعے میں زخمی ہوگیا تھا، خدا کا شکر ہے کہ وہ بچ گیا، اور اللہ نے اس کو ایک نئی زندگی عطا کی، اس واقعے کی سخت مذمت کرتے ہوئے یہ عرض کیا جاتا ہے کہ یہ صاحب اس مہم کا روح روان ہے جو پاک فوج کے خلاف بڑی زور و شور سے چلائی جا رہی ہے۔ کل جب ان صاحب پے حملہ ہواتو اس وقت یہ ھوش ربا بریکنگ نیوز جیو نیوز پے نشر ہونا شروع ہوئی کہ حامد میر نے یہ وارننگ جاری کردی تھی کہ اگر اس پے کوئی حملہ ہو یا وہ قتل کردیا جائے تو اس کا مجرم کوئی اور نہیں لیکن پاک فوج کا وہ ادارہ جو نا صرف پاک فوج کے لیے ایک قلعہ ہے لیکن پوری دنیا میں جو سازشیں پاکستان کے خلاف کی جاتی ہیں ان کو بے نقاب کرتا رہتا ہے یہ ادارا ٓائی ایس ائی ہے۔ موصوف نے نا فقط خفیہ ایجنسی کو اپنے وصیت نامہ یا ایف ائی ار میں نامزد کردیا ہے لیکن سربراہ ظہیر الاسلام کو بھی نامزد کردیا ہے۔ اور کل رات سے جیوپے اس واقعے کو لیکر پاک فوج کے ادارے کو بدنام کیا جا رہا ہے۔ کیا ہماری حکومت سوئی ہوئی ہے؟ حکومتی پہلا قدم تو یہ ہونا چاہیے تھا کہ وہ اس پرو پئگنڈا کا جواب دیتی لیکن یہ کام بھی پاک فوج کو ہی کرنا پڑا۔ دوسرا قدم جیو نیوز کو بند کرنے کا ہوتا لیکن ایسا نا کرکے حکومت نے اپنے اپ کو پاک فوج کے خلاف باتیں کرنے والوں کی صف میں کھڑا کردیا۔ کھڑا کیا کردیا وہ تو جب سے نواز شریف کو حکومت سے ہٹایا گیاتھا تب سے پاک فوج کے خلاف ہی ہیں۔ یہ یاد رکھا جائے کہ پاک فوج کو کمزور کرنا ایسا ہی جیسے کسی گھر کی دیوار کو کمزور کیا جائے اور گھر بھی ایسا ہو جو دشمنوں کے حصار میں ہو، اگر اس گھر کی دیوار کمزور ہو جائے تو دشمن اس کو دھکا لگا کر گھر کو تہس نہس کردیگا۔ پاکستان کا مسئلہ بھی ایسا ہی ہے کہ پاکستان اندرونی یا بیرونی دشمنوں کے حصار میں ہے اگر حامد میر اور اس کی کمپنی کو اس طرح سے ازاد اور بے لغام چھوڑا گیا تو پاکستان کا اللہ ہی حافظ!
حامد میر پے جو حملہ ہوا ہے اس کی مکمل تحقیقات کی جائے اور جس نے بھی حملہ کیا ہے اور جو کوئی بھی اس سازش میں ملوث ہیں ان سب کو بے نقاب کرکے عوام کے سامنے حقائق لا ئے جائیں۔ میرا شک ہے کہ یہ ان لوگوں کی ہی کارستانی ہوسکتی ہے جو پاک فوج کو کمزور کرنے پے تلے ہوئے ہیں۔
اور حکومت کو چاہیے کہ حامد میر اور اس کے ساتھیوں کے خلاف انکوائری کرے کہ وہ کس دشمن کے ٹول بنے ہوئے ہیں اور ان کے پیچھے کون سی خفیہ طاقتیں ہیں۔ ان سب کو بے نقاب کرکے پاک فوج اور پاکستان کو حامد میر اور اس کی کمپنی کی سازشوں سے بچایا جائے۔
حامد میر نے سیدھا الزام پاک فوج کے خفیہ ادارے پے لگایا ہے، جس پے ایک جامع کمیٹی بنائی جائے، اگر یہ الزام جھوٹھا ثابت ہو تو حامد میر کے خلاف غداری کا مقدمہ بنایا جائے۔ یہ یقین سے کہا جاسکتا ہے کہ یہ محض جھوٹا الزام اور بہتان ہی ہے۔
حکومت جیو نیوز پے فوری پابندی عائد کرے، کیونکہ یہ چینل پاکستانی فوج اور پاکستان کی سلامتی کے خلاف کام کرتا ہے۔ ثبوت کے لیے اس کے نشر کیے گئے پروگرام ہی کافی ہیں۔