دھت تیرے کی

Posted on August 13, 2013



یہ ہندوستان والے اب تک پرانے ہتھکنڈوں سے باز نہیں آئے اس بار بھی وہی پرانی دروغ گوئی کہ پاکستانیوں نے جراتمندانہ انداز میں اندر گھس کر مقبوضہ کشمیر میں بھارتیوں کے گلے کاٹ دیے۔ ۔۔۔۔۔
طرفہ تماشہ یہ ہے کہ وزیر دفاع کے بیانات ہر بار بدلوائے گئے۔۔۔ اللہ اللہ کیا حکمرانی ہے اپوزیشن کی کہ وزیر دفاع نے پہلے کہا کہ پاکستانی فوجیوں نے کنٹرول لائن کے اندر 450 میٹر اندر گھس کر 5 بھارتی سورماو¿ں کے گلے کاٹ ڈالے اور ٹہلتے ہوئے واپس آگئے۔۔ جب تمام غیر ملکی ایجنسیوں (پاکستان نے نہیں) اس کی تردید کر ڈالی تو کہا گیا۔۔۔۔ ”نہیں ہم نے کہا تھا کہ پاکستانی فوج کی وردی پہنے ہوئے بعض افراد نے یہ حرکت کی ہے۔۔۔۔۔“
وزیر خارجہ سلمان خورشید نے اس بیان کی فوراً تائید کرڈالی کیونکہ پاکستان دفتر خارجہ کے برعکس ان کو اچھی طرح علم تھا کہ ”کہتی ہے ان کو خلق خدا غائبانہ کیا“
لیکن اس بیان پر بی جے پی نے جو جوتم پیزار کی کہ اللہ کی پناہ ۔۔۔ لہذا وزیر دفاع پھر پلٹ گئے اصل بیا ن کی طرف کہ بھائی یہ پاکستانی فوجیوں کا خصوصی دستہ تھا۔۔۔ جو آیا اور چھاگیا۔۔۔۔اور پھر واپس چلا گیا۔۔۔ کہتے ہیں اس طرح کبھی کارگل میں جنرل مشرف نے بھی رات گزاری تھی LOC2اور بھارتی اب تک کہتے ہیں کہ ان کی آمد ہماری نااہلی اور واپسی انکی بہادری تھی۔۔ پیار میں ہی تسلیم کرکے بات کو ختم کردیں۔۔۔!!
لیکن حالات ایسے نہیں ہیں رجو بھائی کے خانوادے سے تعلق رکھنے والے وزیراعلیٰ نریندر مودی نے بی جے پی کی انتخابی مہم شروع کردی ہے اور وہ بیانات دیتے ہیں جو جنگ کرانے کیلئے کافی ہیں۔ ان کے بیانات کا جواب وزیراعلیٰ شہباز شریف کو دینا چاہیے تھا لیکن وہ تو گم صم ہیں۔۔۔۔ اور رس بھی نہیں گھول رہے۔ خاموش تو وزارت خارجہ مشیر اور خصوصی نائب سرتاج عزیز اور طارق فاطمی بھی ہیں۔ یادش بخیر۔۔۔ طارق فاطمی صاحب جب ٹاک شوز میں آتے تھے تو بھارت کے بخیہ ادھیڑ دیا کرتے تھے مگر اب کے خود بخیہ گری میں مصروف ہیں۔ ایک پرانی پھٹی ہوئی قبائے فاخرانہ عطا ہوئی ہے مگر اس میں ہزاروں چھید بھی تو ہیں۔۔۔۔ رہے سرتاج عزیز تو وہ ابھی تک صدارتی امیدوار ہیں۔ ان حالات میں کون کیا کرسکتا ہے۔ وزیراعظم دعائیں مانگنے کے بعد رائے ونڈ میں تھے۔ وزیرداخلہ بہت عرصے بعد بلوچستان میں نمودار ہوئے۔ اہل ایمان کی طرح لیکن کوئی ٹھوس بات کیے بغیر لمبی سی پریس کانفرنس کرڈالی۔ کہتے ہیں 15000 اسٹاف دیں گے، مشین گنیں دیں گے۔ لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے کس کو دیں گے؟ پنجاب سے آنے والی پولیس کو۔؟؟
وہ یہ بھی کہتے ہیں کہ حکومت کو کام کرنے دیا جائے۔۔۔ یہ بات ٹھیک ہے۔۔۔۔ خبردار کسی نے حکومت کو کام سے روکا۔۔۔ مرغا بنا دیا جائے گا۔
اب یہ پتہ نہیں کہ چوہدری نثار معرکہ آرا سیکیورٹی پالیسی کب لارہے ہیں جس کے بعد دہشتگردی بند ہوجائے گی لیکن یہ بھی یاد رکھیں انہوں نے کہا ہے کہ 13 سال کا گند چند ماہ میں صاف نہیں ہوگا۔۔۔ چلیں صبر کرلیں۔۔۔۔ مزید بم دھماکوں اور ٹارگٹ کلنگ کے لئے تیار ہوجائیں کہ وزیر داخلہ کا اعلان ہے کہ گند صاف ہونے میں وقت لگے گا۔ کچھ لوگ بڑے عجیب ہیں کہتے ہیں مسلم لیگ ن کا ہنی مون از ا¾ور
ہم نے بہت عرض کی کہ بھائی اس کے لیے 90 دن کی مہلت ہوتی ہے لیکن ابھی صرف 54 دن ہوئے ہیں انہوں نے ترت جواب دیا 50 دھماکے اور 500 لوگ ہلاک ہوگئے ہیں۔ روپے کی قیمت نے زرداری کا بھی ریکارڈ توڑ دیا ہے، تیل اور پیٹرول کی قیمت کا گراف مستقل بڑھ رہا ہے اور ذرا سبزی کے ٹھیلے پر آٹے دال کا بھاو¿ یاد نہ آجائے تو مونچھیں منڈا دینا۔

رہی وفاق کی حکومت وہ نہ ایل او سی پر کچھ کررہی ہے نہ بھارتی جارحانہ بیانات پر اور نہ ہی معیشت کے بارے میں۔۔۔ اپنی ٹیرر پالیسی تو ابھی بہت دور کی بات ہے اس کا کام تو صرف چلتے رہنا ہے۔۔۔۔ کسی بھی سمت میں ہو۔۔۔۔ ان کا کہنا یہی ہے کہ جہنم میں گیا ہنی مون۔۔۔۔پر نالا وہیں گرے گا جہاں رائے ونڈ جائے گا۔